‘کوئی مقدس گائے نہیں، کچھ لوگ نیب کی بنیاد پر سیاست میں زندہ رہنا چاہتے ہیں’

لاہور: چیئرمین نیب جسٹس (ر) جاوید اقبال نے کہا ہے کہ ملک میں کوئی مقدس گائے نہیں، کچھ لوگ نیب کی بنیاد پر سیاست میں زندہ رہنا چاہتے ہیں، کرپشن نے ملک کو برباد کر دیا، نیب نے جو جنگ شروع کی وہ جاری رہےگی، پاکستان میں لوٹی دولت کو واپس دلانا مشکل کام ہے، امید ہے نظام میں رفتہ رفتہ بہتری آئے گی۔
لاہور میں تقریب سے خطاب کرتے ہوئے چیئرمین نیب جسٹس ریٹائر جاوید اقبال نے کہا کہ گذشتہ 4 سال کے دوران 1270 ریفرنس مختلف عدالتوں میں دائر ہوئے، نیب کیسز کے ریفرنسز کا فیصلہ کرنا میرے اختیار میں نہیں، یہ عدالتوں کا کام ہے۔ ،احتساب عدالتوں میں پہلے ہی بےشمار کیسز موجود ہیں ورنہ اتنی تاخیر نہ ہوتی۔
انہوں نے کہا کہ نیب نے اربوں روپے کی زمین ریکور کی، ریکوری ہمارے پاس امانت تھی، امانت میں آج تک خیانت کا خیال نہیں آیا۔ چائے کی پیالی میں طوفان برپا کیا گیا کہ ریکوری کہاں گئی۔ ہمیں ریکوری کرنسی نوٹوں کی شکل میں نہیں ہوتی کہ گننا شروع کر دیں۔ نیب کا مکمل آڈٹ 3 دفعہ ہو چکا ہے۔ ایک صاحب نے کہا نیب کے افسران رشوت لیتے ہیں، میرے پاس ثبوت موجود ہیں۔ وہ صاحب میرے پاس ثبوتوں کیساتھ آ جائیں، کارروائی کیلئے تیار ہیں۔

جسٹس ریٹائر جاوید اقبال نے کہا کہ کوئی مقدس گائےنہیں،جوکرےگاوہ بھرےگا۔ خلیفہ وقت دوچادروں کاحساب دےسکتاہےتوہم انکارکرنیوالےکون ہیں، آپ کی اناکوتسکین میری ذات کومتنازع بنانےسےملتی ہےتوضرور بنائیں، ریاست مدینہ کےخواب کی تعبیردیکھنی ہےتوخوداحتسابی کاعمل اپناناہوگا۔

50% LikesVS
50% Dislikes

اپنا تبصرہ بھیجیں